• August 9, 2020

سکھر،محکمہ آبپاشی کا کینالوں سے تجاوزات ختم کرانے کیلئے ممکنہ آپریشن

سکھر(ہم صفیر نیوز)محکمہ آبپاشی کا عدالتی احکامات پر کینالوں سے تجاوزات ختم کرانے کیلئے آپریشن، کرینیں، بلڈوزر، پولیس موبائلیں اور میونسپل کا ہتھوڑا فورس جمع کر لی، ممکنہ آپریشن کے خلاف رہائشیوں نے بھی قمر کس لی، خواتین اور مرد کا بچوں سمیت آپریشن کے خلاف احتجاج، مر جائینگے لیکن گھر وں کو مسمار نہیں ہونے دینگے، متاثرین، کینالوں پر غیرقانونی گھر اور تجاوزات بنانے والوں کے خلاف آپریشن کیا جا رہا ہے، انتظامیہ، تفصیلات کے مطابق محکمہ آبپاشی کی جانب سے دریائے سندھ نہروں ر ائس کینال، کیر تھر کنال دادو کینال پر قابضین کے خلاف آپریشن ایک بار پھر شروع کر دیا گیا ہے جس کے لئے گذشتہ روز محکمہ آبپاشی کے عملے کی بھاری نفری نے تجاوزات ختم کرانے کیلئے سکھر بیئراج پرکرینیں، بلڈوزر، پولیس موبائلیں اور میونسپل کا ہتھوڑا فورس جمع کرکے آپریشن کرنے کی کوشش کی تو اطلاع ملنے پر کینالوں کے ہزاروں کی تعداد میں رہائشی مرد و خواتین قرآن پاک اٹھاکر سکھر بیراج کے قریب جمع ہوگئے ممکنہ آپریشن کے خلاف واہ اتحاد سکھر کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرہ اور دھرنا دیااور بے گھر کئے جانے والے عمل کے خلاف شدید نعریبازی کی کینالوں پر رہائش پذیر افراد اور واہ اتحاد کے رہنماؤں سکندر میرانی، صدام حسین سبزوئی، سید مظہر حسین شاہ، پرویز میرانی و دیگر کا کہنا تھا کہ انتظامیہ نے اپنے معاہدے سے ایک بار پھر منہ پھر لیا ہے تینوں کینالوں پر بیس ہزارسے زائد گھر آباد ہیں، پانچ ہزارگھروں کو روڈ بڑا کرنے کا کہہ کر پہلے ہی مسمار کر دیا گیا اور ہمیں یقین دلایا گیا تھا کہ ہمیں متبادل جگہ فراہم کی جائیگی لیکن افسوس انتظامیہ سمیت منتخب نمائندگان نے بھی ہمیں لاوارث چھوڑ دیا ہے مظاہرین نے اعلان کیا کے جب تک ہمیں متبادل جگہ فراہم نہیں جاتی ہم جان دے کر بھی اپنے گھروں کی حفاظت کرینگے دوسری جانب محکمپ آبپاشی کے افسران و عملے کا کہنا تھا کے کینالوں سے تجاوزات کے خاتمے کیلئے سپریم کورٹ کے احکامات پر عمل کیا جا رہا ہے، کینالوں کے مکینوں کے احتجاجی سلسلے کے دوران سکھر پولیس کی بھاری جمعیت بھی سکھر بیئراج کے اطراف میں تعینات کی گئی تھی۔

Read Next

مقبوضہ کشمیر: بھارتی فوجی محاصرہ مسلسل129ویں روز بھی جاری رہا

Leave a Reply

Your email address will not be published.